سزا پانے والے تین افسر سول جیل حکام کے حوالے، آئی ایس پی آر

اسلام آباد: ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ جن 3 افسران کو 30 مئی کو سزا دی گئی تھی انھیں سول جیل حکام کے حوالے کر دیا گیا۔

ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ سزا یافتہ افسران کے بارے میں انٹیلی جنس معلومات ملتے ہی گرفتار کرلیا گیا تھا۔ جب تک ٹرائل چلتا رہا تینوں افسران فوج کی حراست میں رہے۔

Maj Gen Asif Ghafoor

@OfficialDGISPR

Three officers sentenced on 30 May 2019 have been handed over to civil jail authorities. Earlier, convicted had been immediately arrested upon intelligence about their involvement and remained under military custody throughout their respective trial.

یاد رہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے جاسوسی کے الزام میں 2 فوجی اور ایک سول افسر کی سزاؤں کی توثیق کر دی تھی۔ جس کے بعد انہیں جیل منتقل کر دیا گیا تھا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق بریگیڈیئر (ر) راجا رضوان کو موت کی سزا جبکہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال کو 14 سال قید بامشقت کی سزا سنائی گئی تھی۔ دونوں افسران غیر ملکی ایجنسیوں کو معلومات دے رہے تھے۔ ان کے علاوہ ڈاکٹر وسیم اکرم کو بھی سزائے موت سنائی گئی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال پر جاسوسی کے الزامات تھے۔ آرمی چیف کی ہدایت پر ان کا کورٹ مارشل کیا گیا تھا۔ لیفٹیننٹ جنرل (ر) جاوید اقبال کور کمانڈر گوجرانوالہ بھی تعینات رہے۔ اس کے علاوہ لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ جاوید اقبال ڈی جی ملٹری آپریشن اور ایڈجوٹینٹ کے عہدوں پر بھی رہے

اپنا تبصرہ بھیجیں